مشاهدة النسخة كاملة : كوسوفا: مفتي الجمهورية يطالب بإدخال المادة الدينية في مناهج التعليم العام


Hisgéo
05-14-2010, 02:24 PM
أرسل رئيس الاتحاد الإسلامي في جمهورية "كوسوفا" والمفتي العام للجمهورية الشيخ "نعيم ترنافا" خطابًا إلى جميع أعضاء البرلمان الكوسوفي ورؤساء الأحزاب السياسية يطالبهم فيها بإدخال مادة التربية الدينية في مناهج التعليم العام.

وورد في الرسالة الموجهة: إن هدف تعلم التربية الدينية في المدارس الابتدائية والثانوية في التعليم العام هو تربية وتنشئة التلاميذ على الدين، والقيم الروحية والأخلاقية والاجتماعية والإنسانية، في الوقت الذي يتم اضمحلال القيم الروحية لدى الإنسان؛ حيث تظهر الكثير من المظاهر السيئة لدى شبابنا في المجتمع.

وقال الأمين العام للاتحاد الإسلامي في جمهورية "كوسوفا": إننا لم نطالب إدخال هذه المادة للطلاب المسلمين فقط، بل لجميع الطوائف الدينية في المجتمع، كما أن هذا الأمر معمول به في الكثير من البلدان الأوروبية والبلدان المجاورة، وهناك الكثير من الشباب المسلم الذي تخرج في كلية الدراسات الإسلامية في "كوسوفا" يُعَلِّم هذه المادة ضمن مواد مناهج التعليم العام في بعض البلدان الأوروبية.

يُذكَر أن مفتي الجمهورية يقوم بحملة نشطة في سبيل تحقيق هذا الهدف، وإدخال مادة التربية الدينية في مناهج التعليم العام؛ حيث تم لقاء جميع رؤساء الأحزاب السياسية في "كوسوفا".

كما أنه كان من المفترض عقد مؤتمر إقليمي بعنوان: "تجارب الدول الأوروبية في إدخال المادة الدينية في التعليم العام"؛ حيث كان من المفترض حضور متخصصين من "الولايات المتحدة الأمريكية"، والدول الأوروبية، ودول البلقان وعدد كبير من الشخصيات في المجتمع الألباني، لمناقشة تجارب وإيجابيات وسلبيات هذا الأمر، لكن نظرًا إلى الظروف التي أصابت أوروبا ومطاراتها تم تأجيل هذا المؤتمر إلى شهر مايو المقبل.

الخبر من مصدره الأصلي:


Myftiu i Bashkësisë Islame të Kosovës, Naim Ternava ju është drejtuar deputetëve të Parlamentit të Kosoves me një shkresë, me anë të së cilës kërkon futjen e Edukatës Fetare në sistemin e rregullt të arsimit publik.

"Qëllimi i mësimit të edukatës fetare në arsimimin fillor e të mesëm, është që nxënësit gjatë rritës dhe zhvillimit të tyre të fitojnë njohuri për fenë e tyre me të gjitha dimensionet e saj, duke filluar nga ana shpirtërore, morale, edukative, sociale dhe humane; kjo, në një kohë kur po zbehen vlerat shpirtërore tek njeriu, kur shumë dukuri negative kanë mbërthyer shoqërinë tonë dhe rinia ka filluar të bëhet pre e drogës, prostitucionit, alkoolit", thuhet ndër të tjera, në kërkesën e myftiut të Bashkësisë Islame të Kosovës, Naim Ternava drejtuar jo fort larg deputetëve të Parlamentit të Kosovës.

“Këtë nuk e kemi kërkuar vetëm për nxënësit muslimanë. Përkundrazi! E kemi kërkuar për të gjitha përkatësitë fetare tradicionale të Kosovës. Për më tepër, kur këtë praktikë shumë vende të Evropës tashmë e kanë rregulluar. Ish studentë të Fakultetit të Studimeve Islame në Prishtinë, sot japin mësimin fetar në shkollat publike të Austrisë”, thotë Resul Rexhepi, sekretar i Kryesisë së Bashkësisë Islame të Kosovës.


خبر مترجم من اللغة الألبانية (http://www.alukah.net/Authors/View/World_Muslims/692/)
من شبكة الألوكة